پی ایس ایل سے بہت کچھ سیکھنے کو ملا ،مجھے کرکٹ کھیلنے پرگھرسے کئی بار نکالا گیا اور مار بھی پڑی:حارث رؤف

264

کرکٹ سے جڑی ہر خبر اور زبردست ویڈیوز کے لیے ہمارا پیج لائیک کریں شکریہ
لاہورقلندرزکے باؤلر حارث رؤف نے کہا ہے کہ پاکستان سپرلیگ ایک بہت بڑا پلیٹ فارم ہے جس سے بہت کچھ سیکھنے کو ملتا ہے، ابتداء میں مجھے کرکٹ کھیلنے پرگھرسے کئی بار مار بھی پڑی، نکالا بھی گیا تاہم


یونیورسٹی کی فیس ادا کرنے کے لیے کرکٹ کھیلتا رہا۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے لاہور قلندرز کے باؤلر حارث رؤف نے بتایا کہ انہوں نے کرکٹ ٹیپ بال سے شروع کی، پہلے گھر سے کرکٹ کے لیے سپورٹ نہیں ملتی تھی، مار پڑتی تھی، گھر سے کئی بار نکالا بھی گیا، سامان دوستوں کے گھر رکھتا تھا، جب سے لاہورقلندرز کا حصہ بنا ہوں زندگی بدل گئی ہے، اب گھر والے بھی سپورٹ کرتے ہیں۔حارث روف نے کہا کہ کرکٹ کھیل کراپنی یونیورسٹی کی فیس ادا کی کیونکہ گھر والے تعلیم کے لیے وسائل نہیں رکھتے تھے،لاہورقلندرزمیں ٹرائل میں تیز ترین بال کی اور ٹیم کا حصہ بن گیا، اس معاملے میں کوئی سفارش نہیں ہوتی،

جس میں کرکٹ ٹیلنٹ ہے وہ اب آگے آسکتا ہے۔حارث روف نے کہا کہ ہر کرکٹر کا خواب ہوتا ہے کہ بڑے سے بڑے فورم پر کرکٹ کھیلے، پاکستان کے لیے کھیلنا ہر کرکٹر کا سب سے بڑا خواب ہوتا ہے، پاکستان سپرلیگ ایک بہت بڑا پلیٹ فارم ہے جس سے بہت کچھ سیکھنے کو ملتا ہے۔انہوں نے بتایا کہ آسٹریلیا میں بھارتی کوچ نے سب سے تیز باؤلر کو بولنگ کرنے کا موقع دیا جس پر انہوں نے بہت سراہا، وہاں ویرات کوہلی کو بال کرنے سے بہت اعتماد ملا، سیشن کے اختتام پر ویرات کوہلی نے ٹپس دیں کہ اونچ نیچ کرکٹ کا حصہ ہے، آپ نے خود کو مضبوط رکھنا ہے اور آگے بڑھنا ہے۔